Tag Archives: Attaur Rehman

آپ جو ہونے دینگے وہ جاری رہیگی

تحریر: میر محمد علی ٹالپر

ترجمہ: لطیف بلیدی

مبینہ طور پر انکے دو ارب روپے خرچ کرنے سے اگر یہ ذمہ داری خلیجی شیوخ کی ہے تو پھر کیوں نہ اسے سب سے بڑی بولی لگانے والے کو لیز پر دے دیا جائے؟ کچھ لوگ اپنی آتما کوڑیوں کے عوض بیچنے کو تیار ہیں اور ہم یہی ہوتا ہوا دیکھ رہے ہیں

Mir Muhammad Ali Talpurعطاالرحمان نامی ایک شخص، جسے خبروں میں ایک مقامی بزرگ کہا گیا ہے، نے معدومیت کے خطرے سے دوچار پرندے تلور (چرز) کی عرب حکمرانوں کے ہاتھوں سالانہ سیر سپاٹوں کے دوران بلوچستان (جہاں یہ پرندے اپنی ہجرت کے دوران قیام کرتے ہیں) میں نسل کشی پر پابندی لگانے کے حوالے سے دائر درخواست پر سپریم کورٹ میں جو دلیل پیش کی ہے، اگر کم سے کم بھی کہا جائے تو، وہ چونکا دینے والا تھا۔ انہوں نے کہا: ”یہاں پرندوں کے شکار کیلئے آنے والے معززین نے نہ صرف بعض منصوبے قائم کیے ہیں بلکہ موسم کے وقت 50 پرندوں کے شکار پر ایک کروڑ روپے بھی ادا کر رہے ہیں۔ شکار کے ہر موسم میں بلوچستان تقریباً دو ارب روپے کماتا ہے۔“ سپریم کورٹ کی طرف سے انہیں ایک مدعی کے طور پر قبول کر لیا گیا ہے اور دلچسپ بات یہ ہے کہ بلوچستان کی غیرفقری بزدل حکومت، جسکی قیادت روز بروز بڑھتی ہوئی شرائط کے زیر اطاعت ڈاکٹر مالک کر رہے ہیں، بھی یہی چاہتی ہے کہ یہ قتل عام جاری رہے کیونکہ انہیں ان شیوخ کی طرف سے بخشش اور استعمال شدہ گاڑیاں ملتی ہیں۔ 2014 میں ایک سعودی شہزادے نے چاغی میں 21 روزہ شکار سفاری کے دوران 2100 سے زائد تلور شکار کیے۔ اس نے کتنا پیسہ دیا؟

Continue reading

Leave a comment

Filed under Mir Mohammad Ali Talpur

What you allow is what will continue – Mir Mohammad Ali Talpur

If responsibility is to be delegated to Gulf sheikhs for the alleged two billion rupees they spend why not lease it out to the highest bidder? Some are ready to sell their souls for a pittance and this is what we are witnessing

Mir Muhammad Ali TalpurThe argument presented by one Attaur Rehman, who news reports call a local elder, in the Supreme Court (SC) for the petition regarding the ban on decimation of the endangered Houbara bustard by Arab rulers during their yearly excursions in Balochistan (where these migrating birds rest) was shocking to say the least. He said: “The dignitaries who come to hunt the bird have not only established certain projects but are also paying Rs 10 million for hunting 50 birds in season. Balochistan earns approximately two billion rupees every hunting season.” He has been accepted as a party by the SC and, interestingly, the spineless Balochistan government, led by the ever-capitulating Dr Malik, also wants killing to continue because they receive the sheikhs’ handouts and used cars. In 2014, a Saudi prince poached over 2,100 bustards in 21-day hunting safari in Chagai. How much money did he give?

Continue reading

Leave a comment

Filed under Mir Mohammad Ali Talpur