گوادر آئی ڈی کارڈ کی تیاریاں مکمل،علاقہ دیگر افراد کیلئے ویزہ زون میں تبدیل


ID CARD
گوادر(بیور چیف سنگر) گوادر چین اقتصادی راہداری کو لے کر پاکستان اور چین مشترکہ طور پر گوادر آئی ڈی کارڈ متعارف کرانے کی تیاری میں ہیں۔گوادر آئی ڈی کارڈ کا اصل مقصد گوادر میں رہائش پذیر لوگوں کی مکمل نقل و حرکت کے ساتھ یہاں پر مقبوضہ بلوچستان کے دیگر بلوچوں کی آمد و رفت کو روکنے کے ساتھ پنجاب اور کراچی سے دیگر آبادکاروں کو یہاں منتقل کرنا ہے تاکہ بلوچوں کی کم آبادی کو اقلیت میں چند سالوں میں بدل کر یہاں پر مکمل پنجابی و فوجی لابی کا کنٹرول ممکن بنایا جا سکے۔

بیور چیف سنگر کی رپورٹ کے مطابق گوادر ریذیڈنس کارڈ کا نام اصل میں گوادر آئی کارڈ ہے جو بالکل یو اے ای کی امارات آئی ڈی کارڈ کی طرح ہے۔ جس میں ایک سم کے ساتھ کارڈ ہولڈر کی فنگر پرنٹس،آئی اسکین سمیت پوری ڈیٹا موجود ہو گی اور اطلاعات کے مطابق گوادر میں پاکستانی فوج کی خصوصی کمانڈو جو سیکورٹی سنبھالیں گے ہر چوکی و اندرونی گزرگاہ کے ساتھ گوادر کے داخلی و خارجی راستوں و سمندری راستوں پر مخصوص کمپوٹرائز سسٹم نصب ہونے کے ساتھ پاکستانی سیکورٹی فورسز کی گاڑیوں میں بھی جدید حالات موجود ہوں گے جو ہمہ وقت اس کارڈ کے مخصوص نمبر سے اسکے جعلی و اصلی ہونے کی شناخت کر سکیں گے۔

بیورو چےٖف کے مطابق کٹھ پتلی مالک حکومت کے ایک مقامی ذمہ دار نے کہا ہے کہ آنے والے وقتوں میں اگر یہ اقتصادی زون کامیاب ہوا تو گوادر کے مقامی باشندوں کے علاوہ مقبوضہ بلوچستان کے دیگر بلوچ گوادر میں داخلے کے لیے داخلی چیک پوسٹوں پر ایک فارم فل کریں گے جن میں انکی بائیوڈیٹا سمیت آئی اسکین اور فنگر فرنٹ ہوں گے، اور ایک مخصوص ٹیکس انکو ادا کرنی پڑئے گی،اس کا مطلب کے مقبوضہ بلوچستان کے دیگر باسیوں کے لیے یہ ایک طرح سے ویزہ سروس والی کہانی ہو گی۔جس پر پاکستانی فوج کی سربراہی میں کام شروع ہو چکاہے،جو بلوچ کوآنے والے وقتوں میں ساحل و اسکے وسائل سے دور رکھ کر جلد یہاں پر پاکستانی فوج کی پنجاب و پاکستان کے دیگر کھونوں سے آبادکاروں کو بسانے کی گہرئی سازش ہے جس سے بلوچ مکمل اقلیت میں بدل جائیں گے،بیورو چیف کے مطابق اس سلسلے کو گوادر سے شروع کرکے بلوچستان کے دیگر ساحلی علاقوں پسنی ،اورماڑہ اور گڈانی تک وسعت دی جائے گی بلکہ یہ بھی خیال کیا جا رہا ہے کہ گوادر ڈسٹرکٹ کو پاکستان مقبوضہ بلوچستان سے آنے والے وقتوں میں الگ کر کے ایک ملٹری کنٹومنٹ یا کوئی اور ڈویژن کا اعلان بھی کر سکتی ہے۔

Leave a comment

Filed under News

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s