Daily Archives: October 15, 2015

میر محمد علی ٹالپر کہانی — حصہ اول/حصہ دوم

تحریر : میر محمد علی ٹالپر اور شیر علی خان
ترجمہ: لطیف بلیدی

یہ میر محمد علی ٹالپر کے دو حصوں پر مشتمل انٹرویو کا پہلا حصہ ہے۔

میر محمد علی ٹالپر 1987 میں

میر محمد علی ٹالپر 1987 میں

سن 1971ء کے موسم خزاں میں میر محمد علی ٹالپر نے اپنی زندگی بطور ایک طالب علم کے ترک کرنے اور بلوچ حقوق کیلئے جدوجہد کرنے کا فیصلہ کیا۔ اپنی فہم و فراست نے انہیں متحرک کیا کہ ناانصافی اور غفلت نے بلوچ عوام کو الگ تھلگ کرکے رکھ دیا ہے اور انہوں نے محسوس کیا یہ ان کے ساتھ کھڑے ہونے کا وقت ہے۔ انہیں بہت کم پتہ تھا کہ ہو سکتا ہے کہ یہ آخری بار ہو جب وہ اپنے گھر واپس لوٹیں اور اپنے خاندان سے ملیں۔ ان کی زندگی کا بیشتر حصہ بلوچ کیساتھ بلوچستان میں اور افغانستان میں جلاوطنی میں رہنے پر منتج ہوا۔

بلوچ جدوجہد کا سوال آج بھی اتنا ہی موزوں ہے جتنا کہ چار دہائیاں قبل تھا چونکہ ریاستی جبر اور ظلم و ستم کا سلسلہ بلاروک جاری ہے۔ اس بناء پر ٹالپر بلوچستان پر ریاستی بیانیے سے پیدا کردہ تصورات کیخلاف بات کرنا جاری رکھے ہوئے ہیں، اور وہ اس خطے میں جدوجہد کی بنیاد کے بارے میں بہتر تفہیم کو فروغ دینے کیلئے کام کرتے ہیں۔ 2013ء میں مجھے ایک ذاتی دستاویزی منصوبے کے حصہ کے طور پر، سرگرم عمل کارکنوں کی جدوجہد، جن کی کہانیاں شاذ و نادر ہی، اگر کبھی بتائی بھی جاتی ہوں تو، کے سلسلے میں میر محمد علی ٹالپر سے انٹرویو کرنے کا موقع ملا۔

The Mir Mohammad Ali Talpur Story: Part I & Part II

Continue reading

Leave a comment

Filed under Interviews and Articles, Mir Mohammad Ali Talpur

The Mir Mohammad Ali Talpur Story: Part I & Part II

Mir Mohammad Ali Talpur in 1987

Mir Mohammad Ali Talpur in 1987

This is the first of a two-part interview of Mir Mohammad Ali Talpur. Published first in Tanqeed on May 2015

In the fall of 1971, Mir Mohammad Ali Talpur (MM Talpur) decided to leave his life as a student to go struggle for Baloch rights. Inspired by his understanding that injustice and neglect had alienated the Baloch people, he felt this was a time to stand alongside them. Little did he know that this could be the last time he would return home and see his family. He ended up staying with the Baloch for the greater part of his life, both in Balochistan and in exile in Afghanistan.

The question of the Baloch struggle is as relevant today as it was four decades ago, as state oppression and persecution continues unabated. As such, Talpur continues to speak out against the perceptions created by the state narrative on Balochistan, and works to promote a better understanding of the basis for the struggle in the area. I had the opportunity to interview MM Talpur in 2013 as part of a personal project documenting the struggles of activists and workers whose stories are rarely, if ever, told.

 میر محمد علی ٹالپر کہانی — حصہ اول/حصہ دوم

Continue reading

Leave a comment

Filed under Mir Mohammad Ali Talpur