مشکے : خواتین کا قابض آرمی کے خلاف ریلی


mashkay zilzila

گزشتہ سال آنیوالے طوفانی زلزلہ کے بعد ریلیف کے نام پر آنیوالی آرمی نے کئی مہینوں سے علاقے کا محاصرہ کیا ہوا ہے۔ فو ج نے ہما رے اسکولوں میں آکر اپنی چوکی بنا ئی ہو ئی ہے جس سے ہما ری آنے والی نسل کی زند گی تبا ہ ہو رہی ہے۔

مشکے(سنگر نیوز) آج مشکے کے عوام نے بڑی تعداد میں ایک ریلی نکالی جو کہ مختلف مقامات سے ہوتی ہوئی مشکے گرلز ھا ئی سکول میں قائم آرمی کیمپ میں داخل ہوئی۔ جہاں مظاہرین نے کئی گھنٹے تک دھرنا دی اور شدید نعرے بازی کی۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مہنازبلوچ نے کہا کہ گزشتہ سال آنیوالے طوفانی زلزلہ کے بعد ریلیف کے نام پر آنیوالی آرمی نے کئی مہینوں سے علاقے کا محاصرہ کیا ہوا ہے۔ فو ج نے ہما رے اسکولوں میں آکر اپنی چوکی بنا ئی ہو ئی ہے جس سے ہما ری آنے والی نسل کی زند گی تبا ہ ہو رہی ہے ایک طرف ہما رے بچے طو فا نی زلزے سے مثاثر ہیں دوسر ی طرف آئے روز کی فائرنگ و کراس فائرنگ سے کئی لوگ ہلاک و زخمی ہوئے ہیں، جن میں نوکجو کے ایک 10سالہ رہائشی جبکہ نلی کے رہائشی ولیداد اور اس کے خاندان کے متعدد افراد ہلاک و زخمی ہوئے ہیں۔

علاقے میں آرمی کی موجودگی سے لوگ عدم تحفظ اور بے یقینی کی کیفیت میں مبتلا ہیں جس سے ہزاروں کی تعداد میں خاندان نقل مکانی پر مجبور ہوئے ہیں جو کہ تا حال بیلہ، اوتھل، وندر ،حب چوکی و دیگر علاقوں میں کسمپرسی کی حالت میں زندگی بسر کررہے ہیں ۔پو رے مشکے کو ایک فو جی قلعے میں تبدیل کیا جا چکاہے، علاقے کے تعلیمی اداروں پر آرمی کی موجودگی کے باعث بچوں کی تعلیم شدید متاثر ہے، سکول کھلنے کے باوجود خوف کے مارے ٹیچر و طلبہ سکول جانے سے کتراتے ہیں، انہوں نے کہا کہ کئی گھر ایسے ہیں جہاں اب تک گھروں کے سامان ملبے تلے دبے ہوئے ہیں جو کہ آرمی کی درندگی کے باعث اپنا گھر بار چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔آرمی کی موجودگی کے باعث علاقے میں کاروبار، زمینداری ، غرض کہ زندگی کے تمام شعبے شدید متاثر ہیں۔

مظاہرین کا مطالبہ تھا آرمی فوری طور پر اپنی بیرکوں میں چلی جائے تاکہ لوگ واپس آکر اپنی زندگی دوبارہ شروع کرسکیں ۔ہم دنیا کے دیگر انسان دوست تنظیموں سے مطالبہ کر تے ہیں وہ ہما ری آواز کے ساتھ ہم آواز ہو کر ہما ری زند گی کی اس کرب کو محسوس کر یں ،اور اس کے خلا ف آواز اُٹھا ئیں اور کیو نکہ یہا ں کے عوام بحالی کی کا م اپنی جگہ مشکے کے عوام ان سے تنگ آکر کہیں دور چلے گئے ہیں ،ہم اپنی مد د آپ کے تحت اپنی بحالی کا کا م جا ری رکھنا چاہتے ہیں ہمیں صرف آرام کی زندگی بسر کر نے کی حق دی جا ئے ۔ ہمیں ایسی مد د نہیں چاہئے جہاں ہما رے بچوں اور ہماری زند گی گز رنا در د نا ک بن چکی ہے ہم عالمی میڈیا اور دیگر تنظیموں سے اپیل کر تے ہیں کہ وہ آکر خو د جا ئز ہ لیں حکومتی نما ئندے روز میڈ یا میں دعوی کر تے رہتے ہیں کہ ہم بحالی کا کا م مکمل کر چکے ہیں لیکن یہ دعوی صر ف میڈ یا تک محد ود ہیں ۔ہم عالمی دنیا اور اُس کی میڈ یا سے اپیل کر تے ہیں وہ آکر خو د تما م با توں کا جائزہ لیکر حقیقت کو سامنے لانے میں اپنا کردار ادا کریں ۔

Leave a comment

Filed under News

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s