Daily Archives: March 19, 2013

مبہم سچ اور مستحکم جھوٹ تبصرہ : میر محمد علی ٹالپر ترجمہ: لطیف بلیدی

آنکہ بلوچ اپنے خلاف مظالم کے جواب میں عوامی سطح پر ڈرامائی انداز میں ردعمل نہیں دکھاتے جس نے ان کی حالت زار کو مبہم کرکے رکھ دیا ہے

 

Mir Mohammad Ali Talpur

متعدد انعام یافتہ کتاب، ”پھٹنے آموں کا ایک کیس“ کے مصنف مسٹر محمد حنیف نے مجھ سے بڑی گرمجوشی کیساتھ اپنی کتاب ”وہ بلوچ جو لاپتہ نہیں رہے اور دیگر وہ جو ہیں“ کی گزشتہ ماہ کراچی ادبی میلے میں منعقد ہونیوالی تقریب رونمائی میں میزبانی کی درخواست کی۔ کتاب میں لاپتہ ڈاکٹر دین محمد بلوچ کی بیٹی سمن بلوچ حنیف سے ایک انتہائی تکلیف دہ سوال پوچھتی ہے کہ، ”اگر وہ میرے والد کو پھانسی دینا چاہتے ہیں تو وہ اس کو عدالت میں لائیں، اس پر مقدمہ چلائیں اور ہم سب کے سامنے اسے پھانسی دیں۔ ہمیں کم از کم یہ جان کر اطمینان ہوگا کہ وہ اب نہیں رہے۔ لیکن اگر وہ اسے تین سال، چار سال تک زندہ رکھتے ہیں، اگر وہ ہر روز اس پر تشدد کرتے ہیں اور پھر اسے قتل کرکے اس کی لاش کو پھینک دیتے ہیں، آخر اس کا مقصد کیا ہے؟“ تقریب کو شروع کرنے کیلئے میں نے یہ سوال وہاں موجود پینل کے ارکان کے سامنے رکھا اور حنیف نے بجا طور پر کہا کہ، ”وہ اسلئے ایسا کرتے ہیں کہ وہ اس سے بری الذمہ ہو سکتے ہیں۔“ میرا خیال یہ تھا کہ یہاں سزا سے استثنیٰ کا ایک کلچر غالب ہے اور یہ ان لوگوں کو خوفزدہ کرنے کیلئے کیا جاتا ہے جو اسٹابلشمنٹ کی طاقت سے منحرف ہیں اور اپنے حقوق کیلئے لڑرہے ہیں۔ 

Continue reading

Advertisements

Leave a comment

Filed under Mir Mohammad Ali Talpur, Write-up

An open letter to Hamid Mir (Geo TV) by Dr. Allah Nazar.

dr allah nizar_hamid mir

Dear Hamid Mir,

I’m writing you this letter with the hope that perhaps the historians of the next century – standing in the witness box of history – will reveal the truth about the oppressed Baloch nation, hold the colonial powers and occupying rulers of the day accountable and examine the role and discourse of its advocates and intelligentsia. It should not be the case that today’s columnists and intellectuals are restrained by the fear of the ruler or its lust for conquest.

Continue reading

Leave a comment

Filed under Write-up