Daily Archives: September 2, 2012

Baloch Journalist from Gwadar shot dead in Karachi

<a href='http://balochwarna.com/features/articles.18/Pakistan039s-secret-dirty-war.html'>Pakistan's secret dirty war</a>

Karachi : The Vice president of Gwadar Press Club, who had gone to Karachi to attend a two-day media training workshop organized by the International Federation of Journalists (I.F.J.), was shot dead in Lyari area of Karachi on Friday 31 August 2012.

According to details Dilshad Dehani, the Vice President of Gawadar Press Club and a senior reporter of Daily Balochistan Express (English) and Daily Azadi (Urdu), was returning from a media training workshop when unidentified attackers shot him dead at a bus stop in Lyari, Karachi. The attackers fled from the scene after the incident.

Continue reading

Leave a comment

Filed under News

Sept 2: Mir Ghulam Mohammed Shahwani

Leave a comment

Filed under Baloch Vanguards

عظیم سانحہ – میرغلام محمد شاہوانی

۔۱۹۵۵ء میں ڈاکٹر خان کو بلوچستان کے شاہی جرگہ ممبروں اور کوئٹہ بلدیہ کے ممبروں نے جس ڈرامائی انداز میں نواب اکبر بگٹی کے مقابلہ میں منتخب کر لیا تھا۔ غلام محمد شاہوانی نے اس ڈرامائی انتخاب کو عظیم سانحہ قرار دیکر نوائے وطن کے عزیز نمبر (16 جون 1955ء)میں اداریہ بعنوان عظیم سانحہ لکھا۔ جس کے لکھنے پر ڈاکٹر خان صاحب نے غصہ میں آکر کہا تھا کہ میں بلوچوں کے صحافی غلام محمد شاہوانی کی چمڑی اتار کر اپنا جوتا بناونگا چنانچہ24  جون  1955 کو غلام محمد شاہوانی کو جرات مندانہ صحافت کی پاداشت میں گرفتار کیا گیا اور نوائے وطن کی ۲۴ جون کی اشاعت کو ضبط کر لیا گیا۔ نوائے وطن کااداریہ عظیم سانحہ قارئیں کیلئے پیش ہے۔

عظیم سانحہ – میرغلام محمد شاہوانی

دستور میں بلوچستان کی واحد نشست جس ڈرامائی انداز میں ڈاکٹر خا ن صاحب کو پیش کی گئی ہے اس سب کے متعلق تین قبائلی سرداروں نے جو اس ڈرامے کے باغی کرداروں کی حیثیت رکھتے ہیں۔حقیقت کا انکشاف کر کے سرکاری دباؤ کا بھانڈا پھوڑ دیا ہے ان سرداروں نے پہلی مرتبہ اعلانیہ طور پر خداوند انِ حکومت کی منشاء کو ٹھکرا کر ضمیرْ اصول اور فرض کے تقاضوں کو اپناتے ہوئے جرات و بے باکی کا سہارا لے کر جو صحت مند روایت قائم کی ہے وہ ہمارے نزدیک ایک قابل تعریف کارنامہ ہے۔اس اقدام سے بلوچستان کی سسکتی ہوئی امیدوں میں تھوڑی دیر اور رینگنے کی سکت پیدا ہوگئی ہے نیک ارادوں مخلص تمناؤں اور پاک خواہشوں کی صورت میں ہم یہ توقع رکھیں گے کہ بلوچستان کی سسکتی ، رینگتی اور دم توڑتی امیدوں،آرزوؤں اور تمناؤں کو اپنے سینے سے لگانے کیلئے بلوچستان کے لوگ اور آگے بڑھتے جائیں گے۔

Continue reading

Leave a comment

Filed under Write-up